Zulm To Zulm Hy Heart Touching Short Story by Mehwish Siddique

Zulm To Zulm Hy Heart Touching Short Story by Mehwish Siddique

150

لفظی کہانی

عنوان:ظلم تو ظلم ہے بڑھتا ہے تو مٹ جاتا ہے

از:مہوش صدیق

“وقت پر کیوں نہیں آتے؟”

تنور ہوٹل کے مالک نے آج بڑے دنوں بعد صبح صبح چکر لگایا ورنہ تو وہ دن کے 11 بجے ہی کام پر آتا۔

“صاب!میں روز 6 بجے آ جاتا ہوں۔صرف تیس منٹ کیلئے گھر جاتا ہوں اسوقت بہن کو اسکول چھوڑنے جانا ہوتا ہے۔روز جانے سے پہلے میں آٹا بھی گوندھ دیتا ہوں اور برتن بھی دھو دیتا ہوں۔”

علی نے وضاحت دی۔

“تو تو کہہ رہا تھا یہ کام نہیں کرتا نکال دوں اسے۔” بازپرس پر قاسم گڑبڑایا۔

“قاسم جھوٹ بول رہا ہے صاب۔یہ یہاں کا آٹا چوری کر کے گھر لے جاتا تھا۔علی نے اسے روکا تب سے یہ اسکے پیچھے پڑا ہوا ہے۔”

عاصم نے حقیقت بتا دی۔

“نمک حرام!نکل جا یہاں سے۔دوبارہ مجھے یہاں نظر مت آنا۔”

انتقاماً وہ ظلم کر کے علی کی نوکری ختم کرنا چاہتا تھا مگر اللہ نے عاصم کو وسیلہ بنا کر غیبی مدد کی۔

بالآخر ظلم تو ظلم ہے بڑھتا ہے تو مٹ جاتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Verified by MonsterInsights